رواج
By bluejeanimages

پیدائش3 :7-13 ” اُن کو معلوم ہوا کہ وہ ننگے ہیں اور اُنہوں نے اِنجیر کے پتوں کو سی کر اپنے لئے لُنگیاں بنائیں ۔” (آیت 7ب)۔

یہ مکمل طور پر واضح نہیں ہے کہ آیا آدم اور حوا کو یہ احساس ہوا کہ وہ نیکی اور بدی کے علم کے درخت کا پھل کھانے کے بعد برہنہ تھے۔

کچھ کا خیال ہے کہ خدا کا جلال ان کے چاروں طرف تھا، لیکن جب انہوں نے خدا کی نافرمانی کی تو اسے ہٹا دیا گیا۔ کچھ لوگ حیران ہیں کہ کیا روحانی سے کوئی جسمانی مشابہت تھی۔

یہاں خُدا کے ساتھ تعلق رکھنے والے نقش بردار ہیں جو خُدا کے ساتھ ہم آہنگی اور خوشی کے ساتھ کام کرنا چاہتے ہیں۔

نافرمانی کا مطلب ہے کہ اچانک ان کے درمیان ایک خلیج پیدا ہو جاتی ہے کہ انہیں کیا ہونا چاہئے اور وہ کیا ہیں ، اور وہ کیا ہیں اِس بات پر شرم محسوس کرتے ہیں۔

جب ہم ناکام ہوتے ہیں تو ہمیں شرمندگی محسوس ہوتی ہے۔ مجھے شرم نہیں آتی کہ میرا یومیہ مائلیج اولمپک ایتھلیٹ سے بھی بدتر ہے۔ لیکن اگر یہ پیغام حروف کی غلطیوں سے بھری ہوئی ہو، تو میں شرمندہ ہونگا۔!

لیکن یہ واضح ہے کہ آدم اور حوا بھی ایک دوسرے کے دشمن تھے، اور ہم یہ فرض کر سکتے ہیں کہ وہ کسی حد تک خود غرض اور جنسی طور پر ایک دوسرے کے خوف میں مبتلا تھے کہ اب انہوں نے ایک دوسرے کی برہنگی محسوس کی تھی۔ وہ ایک دوسرے کو جانتے تھے۔

چنانچہ انجیر کے پتے سے اس کا "ڈھکنا” فیشن کی صنعت کا آغاز تھا۔ تب سے، انسانیت استعاراتی طور پر "پردہ کرتی ہے”۔

جانوروں کی قربانی کے بعد، خُدا ایک مضبوط لباس بنانے کے لیے ایک سوئی نکالتا ہے، جس میں یسوع کی قربانی کی پیشین گوئی کی جاتی ہے، جس کی موت ایک بار اور ہمیشہ کے لیے ان تمام لوگوں کے لیے شرمندگی کو ڈھانپ دے گی جو اس پر ایمان رکھتے ہیں۔ مجھے امید ہے کہ آپ آج مناسب لباس پہنے ہوں گے!


دُعا سے بنانے کا آیکون

: دعا اے خُداوند تیرا شکر ہو کہ تو مہیا کرتا ہے تاکہ ہم شرمندہ نہ ہوں۔ آمین

:عملی اقدام آج جب آپ کپڑے پہنتے ہیں یا کپڑے اتارتے ہیں توخُدا کا شکر ادا کریں کہ آپ مسیح کی راستبازی میں ملبوس ہیں۔

:غور کرنے کے لئے کتابیں زبور 45: 17-1 ; یسعیاہ 61: 11-10 ; افسیوں 4: 32-25 ; مکاشفہ 3: 6-1

Micha Jazz is Director of Resources at Waverley Abbey, UK.